کاغذی کرنسی

دولت اور جنگیں

جرمنی میں جب 1933ء میں نازی پارٹی الیکشن جیت کر برسراقتدار آئی تو جرمنی کی معیشت بالکل تباہ و برباد ہو چکی تھی۔ 60 لاکھ لوگ بے روزگار تھے۔ پہلی جنگ عظیم میں شکست کے بعد جرمنی کو بھاری تاوان جنگ ادا کرنا پڑ رہا تھا۔ بیرونی سرمایہ کاری کے امکانات صفر تھے۔ 1935ء سے …

دولت اور جنگیں Read More »

فیڈرل ریزرو بینک اور امریکہ

دنیا کے بیشتر ممالک میں وہاں کی کرنسی، وہیں کی حکومت جاری کرتی ہے۔ جیسا کہ پاکستان میں سٹیٹ بینک ہی کاغذی نوٹ جاری کرنے کا اختیار رکھتا ہے۔  مگر حیرت کی بات یہ ہے کہ دنیا بھر کی معیشت کی مرکز نگاہ کرنسی، امریکی ڈالر امریکی حکومت جاری نہیں کرتی۔ فیڈرل ریزرو بینک کو …

فیڈرل ریزرو بینک اور امریکہ Read More »

حکمرانی اور مرکزی بینک

 دنیا بھر کی کانیں اور کارخانے اتنی دولت پیدا نہیں کرتے، جتنی چند مرکزی بینکار اپنے صوابدیدی اختیارات سے چھاپنے لگے تھے۔ ان نجی بینکاروں کو یہ اختیار جمہوری حکومتیں عطا کرتی ہیں۔ کوئی بھی بادشاہ دوسرے اختیارات کی طرح اپنے ملک اور اپنی کرنسی کا کنٹرول کھونا نہیں چاہتا۔ بادشاہ اپنے فیصلوں میں خودمختار …

حکمرانی اور مرکزی بینک Read More »

سیاسی و معاشی حاکمیت

طاغوتی طاقتیں دنیا پہ اپنا تسلط بنانے کی کوششوں میں لگی رہیں اور کاغذی کرنسی اور سودی بینکنگ کا نظام خلافت کا تسلسل رکنے کے ساتھ ہی عروج کی جانب گامزن ہوگیا۔ لوگوں کی قابلیتوں کا استحصال، ان کی دولتوں کو لوٹنا اور کاغذ ی کرنسی کی شکل میں بے وزن و بے قیمت کاغذی …

سیاسی و معاشی حاکمیت Read More »

کاغذی کرنسی کی شرعی حیثیت

خلیفہ مروان بن الحکم کے عہد حکومت میں لوگوں کوجار (بازار کا نام) کے غلّے کی سندیں/راشن کارڈ ملے، جنہیں "صکوک” کہا جاتا تھا۔ لوگوں نے رسیدوں کو ہی آگے ایک دوسرے کو بیچ دیا۔ ابھی  غلہ اپنے قبضہ میں نہ لائے تھے۔ حضرت زید بن ثابت اور حضرت ابو ہریرہ رضوان اللہ اجمعین مروان …

کاغذی کرنسی کی شرعی حیثیت Read More »

کرنسی اور تجارت میں برقی دھوکے

کاغذی کرنسی کے تیزی سے زوال پزیر ہونے کے بعد اب سونا چاندی اور حقیقی دولت کو اپنے زیر اثر رکھنے کیلئے سرمایہ دارانہ نظام نے پوری دنیا میں "پلاسٹک کرنسی” یعنی اے ٹی ایم کارڈ اور کریڈٹ کارڈ کے ذریعے ہر انسان کو غلام رکھنے کی کوشش جاری ہے۔ جبکہ آپ کے پاس اے …

کرنسی اور تجارت میں برقی دھوکے Read More »

سونا چاندی کے اثرات اور کاغذی کرنسی

افراط زر نہ ہونے کی وجہ سے اشیاء کی قیمتوں میں بھی استحکام تھا اور سالوں یا دہائیوں میں مہنگائی کا بہت کم امکان ہوتا تھا۔ برطانیہ میں عام استعمال کی اشیاء کی قیمت سترھویں صدی سے 1914ء تک مستحکم تھی۔ 1717ء سے 1945ء تک یعنی سوا دو سو سال تک برطانیہ میں سونے کی …

سونا چاندی کے اثرات اور کاغذی کرنسی Read More »

فی ایٹ کرنسی، کاغذی کرنسی کی اصل کہانی

امریکا کی سول وار 1862ءکے دوران حکومت نے ایسی کاغذی کرنسی جاری کی جس کی پشت نہ سونا تھا نہ چاندی۔ یہ "گرین بیک” کہلاتی تھی۔ یورپی بینکاروں نے سخت مضطرب ہوتے ہوئے اپنے امریکی بینکار دوستوں کو Hazard Circular نامی مراسلے میں لکھا کہ "حکومتی بونڈز کو بینکاری کی بنیاد بنانا چاہیے اور کسی …

فی ایٹ کرنسی، کاغذی کرنسی کی اصل کہانی Read More »

نکسن دھچکا

بین الاقوامی طور پر ڈالر کی حیثیت 1944ء میں بریٹن ووڈ معاہدہ کے تحت نکل کر سامنے آئی جب امریکہ نے اس میٹنگ کے شرکاء پرعائد کیا کہ وہ ڈالر کو اور اس کے غلبے کو قبول کریں۔ کیونکہ وہ دوسری عالمی جنگ کا  ایسا فاتح تھا جو جنگ سے متاثر نہیں ہوا تھا۔ دس …

نکسن دھچکا Read More »

بریٹن ووڈز معاہدہ اور عالمی مالیاتی ادارے

دوسری جنگ عظیم تک دنیا بھر میں کاغذی کرنسی فروغ پاچکی تھی لیکن مشکل یہ تھی کہ مرکزی بینک آپس میں کس طرح لین دین کریں۔ کوئی بھی مرکزی بینک کسی دوسرے مرکزی بینک کی چھاپی کاغذی کرنسی قبول کرنے کو تیار نہیں تھا اور سونے کا مطالبہ کرتا تھا۔ ڈالر یا پاؤنڈ کی حیثیت …

بریٹن ووڈز معاہدہ اور عالمی مالیاتی ادارے Read More »

error: Content is protected !!