انتخابات

موجودہ نظام انتخاب میں ووٹ دینے کی شرعی حیثیت

موجودہ نظام انتخاب میں ووٹ دینے کو کچھ علماء کراہت کے ساتھ جائز قرار دیتے ہیں، یعنی  "مکروہ” ہے۔ ووٹ دینا مکروہ ہونے کے باوجود موجودہ نظریہ انتخاب سے الگ نہ رہنے کی علماء ہدایت کرتے ہیں۔  ایک حدیث مبارک کا مفہوم ہے کہ "اگر مسلمان کو برائیوں میں سے ہی ایک برائی کا انتخاب …

موجودہ نظام انتخاب میں ووٹ دینے کی شرعی حیثیت Read More »

انتخابات میں امیدوار کی تجویز و تائید

اسلام کے عطا کردہ اصولوں کے مطابق سب سے اہم کام کسی فرد کا نام تجویز کرنا اور پھر تائید کرنا ہے۔ بہترین امیدواران کا نام تجویز اور تائید کرنا ایمانداری کا متقاضی ہے۔ ایماندار لوگوں کے انتخابات سے الگ ہوجانے کی صورت میں کبھی بھی یہ توقع نہیں رکھنی چاہئے کہ متقی لوگ حکومت …

انتخابات میں امیدوار کی تجویز و تائید Read More »

انتخابات کیلئے امیدوارن کی اہلیت

انتخابات کیلئے امیدواران کی قرآن مجید میں بنیادی ذمہ داریاں چار طرح سے واضح کی گئی ہیں۔ "اقامت صلوۃ”، "ایتائے زکوۃ”،  "امر بالمعروف”، "نہی عن المنکر” جو جتنی بہترین سطح پہ ہو اتنا اس پہ ذمہ داریوں کا بار زیادہ ہو۔ جس میں درج ذیل معاملات کو ملحوظ رکھا جائے۔  دین کا علم اوردین سے  …

انتخابات کیلئے امیدوارن کی اہلیت Read More »

انتخابات

اس وقت جمہوری نظام صرف اور صرف ایک چیز پر قائم ہیں اور وہ ہے رائے یعنی ووٹ۔ اس نظام کی بنیادی اکائی ایک ووٹر یعنی رائے دینے والا ہے۔ تصور یہ عام کیا گیا ہے کہ اسی کے ووٹ سے حکومت کا نظام کار چلتا ہے۔ عوامی حمایت کا معیار بھی ووٹوں کی تعداد …

انتخابات Read More »

جمہوریت میں تصور کثرت رائے

ہمارے موجودہ آئین کی دفعات 62 اور 63 کے مطابق ہم نے نیک، سچے اور ایماندار آدمی کا چناﺅ کرنا ہے کہ جس شخص کو ہم ووٹ دے رہے ہیں، وہ سب سے نیک بھی ہے، سچا بھی ہے اور ایماندار بھی ہے۔ اب ایک گانے والا بھی انتخابات میں حصہ لے رہا ہے، اب …

جمہوریت میں تصور کثرت رائے Read More »

error: Content is protected !!