معیشت

آئرش معیشت دانوں نے سونے چاندی کے سکوں پہ عالمی معیشت کے واپس جانے کا عندیہ دے دیا

جیسا کہ ہم جانتے ہیں دنیا کوویڈ ۔19 / کرونا وائرس کے نتیجے میں یکسر تبدیل ہونے والی ہے۔ ہم اپنی زندگی کیسے گزارتے ہیں، ہم کس طرح کام کرتے ہیں، ہم کیسے معاشرتی بناتے ہیں اور رقم کی چالیں کس طرح بدلے گی اور گہرائی سے۔ ہم دوسروں کو پہلے تینوں کا پتہ لگانے …

آئرش معیشت دانوں نے سونے چاندی کے سکوں پہ عالمی معیشت کے واپس جانے کا عندیہ دے دیا Read More »

آزاد بازار ۔۔۔ سوق المفتوحہ

"آزاد بازار” عربی میں سوق المفتوحہ یعنی وہ بازار جس کیلئے جگہ حکومت فراہم کرے اور اس میں مختلف چیزیں خرید کیلئے دستیاب ہوں۔ حکومت اس جگہ کی فراہمی، تزئین و آرائش اور اخراجات، انتظام و انصرام اور حفاظت کی مد میں ماہانہ کچھ کرایہ لیا جاتا ہو۔ آزاد بازار میں ہر ایک تاجر کو …

آزاد بازار ۔۔۔ سوق المفتوحہ Read More »

مال تقسیم کرنے کے مراکز ۔۔۔ الخان المفتوحہ

بازار میں مال آنے سے پہلے یہ گوداموں اور تھوک فروشی کے مراکز میں بھی آسکتا ہے۔ خلافتِ عثمانیہ میں مال تقسیم کرنے کیلئے الگ مراکز قائم کیے گئے، جہاں پر مقامی اور بین الاقوامی مال آتا تھا اور وہاں سے پھر بازاروں میں تقسیم ہوتا تھا۔ ان مراکز کو عربی میں "خان”کہا جاتا تھا۔ …

مال تقسیم کرنے کے مراکز ۔۔۔ الخان المفتوحہ Read More »

ٹیکس / نائبہ سے متعلق تجاویز

شرعی ذرائع آمدن کے علاوہ مجموعی طور پر ایک ٹیکس لگایا جائے۔ وطن عزیز کو "ون ٹیکس سوسائٹی” بنا یا جائے جو کہ دنیا میں ایک اعلی مثال ہوگی۔ مملکت پاکستان ایک مثالی ریاست کی صورت میں افق دنیا پہ ابھرے گا۔ اسی ٹیکس سے بیرونی قرض اتارا جائے اور ملک کی ترقی اور جدت  …

ٹیکس / نائبہ سے متعلق تجاویز Read More »

بیرونی قرضے – External Debt کی ادائیگی

پاکستان میں اسلامی شریعت کورٹ کے فیصلے کے مطابق، حکومت اسلامی، شرعی ذرائع آمدن سے سود کی رقم ادا نہیں کرسکتی ہے۔ کیونکہ وہ قرض سود پہ لیا گیا اور شرعی ذرائع آمدن سے وہ رقم ادا نہیں کی جاسکتی۔اللہ کے رسول ﷺ نے واضح کر دیا ہے کہ "المسلمون علی شروطھم الا شرط حرم حلال …

بیرونی قرضے – External Debt کی ادائیگی Read More »

بجٹ، ریاستی میزانیہ پہ تجاویز

آج کل کے بجٹ ميں آمدنی کم اور خرچے زيادہ ہوتے ہيں جس کا خسارہ عوام پر زيادہ ٹيکس اور اندرونی بيرونی قرضوں کی صورت ميں پورا کيا جاتا ہے۔ جبکہ اسلامی نظام حکومت ميں بجٹ سازی وصول شدہ آمدنی کو اس کے مختلف مصارف ميں عادلانہ طور پر خرچ کرنے کو کہتے ہيں۔ بجٹ کی …

بجٹ، ریاستی میزانیہ پہ تجاویز Read More »

تنخواہ مقرر کرنے کی شرعی حد

نبی کریمﷺ نے مکہ مکرمہ کے حاکم حضرت عتاب بن اسید رضی اللہ عنہ کی سالانہ تنخواہ چالیس اوقیہ چاندی مقرر فرمائی۔ چالیس اوقیہ کا مطلب سولہ سو درہم ہے۔ خلفاء راشدین نے بہت ہی کم تنخواہ بیت المال سے وصول فرمائی لیکن شرعی طور پہ تنخواہ کی کوئی حد مقرر نہیں۔ حضرت ابوبکر صدیق رضی …

تنخواہ مقرر کرنے کی شرعی حد Read More »

حکومت کی آمدن کی تقسیم

حکومت کی آمدن جو کہ بیت المال میں اکٹھی ہوتی ہے، کےمصارف کی حدود اللہ تعالی نے مقرر فرما دی ہیں۔ زکوٰۃ، عشر اور صدقات سے آنے والی آمدنی صرف غرباء اور محتاجوں ميں تقسيم ہوگی اور ان کی تفصيل قرآن و سنت ميں موجود ہے۔ سب سے پہلے فلاح و بہبود مقصود ہے جس …

حکومت کی آمدن کی تقسیم Read More »

اثاثہ جات کی تفصیل – Wealth Statement

حکومت کبھی کبھار حکم دیتی ہے کہ ٹیکس دہندگان، جائیداد و دولت کے گوشوارے wealth statement یعنی اثاثوں کی تفصیلات جمع کروائیں، یہ سلسلہ اب مستقل کردیا گیا ہے۔ اسلامی معاشی نظام کے نفاذ کے بعد اثاثوں کی تفصیلات ہر پاکستانی شہری ہرسال زکوۃ کی ادائیگی کے وقت جمع کروایا کرے اور اس کیلئے وہ اپنی آمدن/اخراجات …

اثاثہ جات کی تفصیل – Wealth Statement Read More »

نجکاری

اسلام نے نجکاری کی حدود مقرر کی ہیں۔ ابن عبّاس سے مروی ہے کہ نبی کریمﷺ نے فرمایا۔ "سارے مسلمان تین چیزوں میں شریک ہیں، پانی، چراگاہ اور آگ”۔ سنن ابودا‎ود اور ابن ماجہ اس حدیث کے روشنی میں دریا‎ؤں کے پانی کی نجکاری نہیں کی جا سکتی اور نا ہی ڈیموں کی نجکاری کی …

نجکاری Read More »

error: Content is protected !!