دنیا کی مردہ ترین زبان

1948ء میں اسرائیل کےقیام تک صرف بارہ افراد عبرانی زبان جانتے تھے۔ اس لئے عبرانی کو ماضی قریب کی مردہ ترین زبان قرار دیا جاتا ہے۔ لیکن اسرائیل کے قیام کے ساتھ ہی عبرانی زبان کو فروغ دیا گیا اور آج عبرانی زبان ناجائز ریاست اسرائیل کی تعلیمی زبان ہی نہیں بلکہ دفتری زبان بھی ہے۔

1948ء وہی سال ہے جب جامعہ عثمانیہ حیدرآباد، بھارت میں میڈیکل انجینرنگ سمیت تمام سائنسی اور سماجی علوم کی تعلیم بہت کامیابی سےاردو میں دی جارہی تھی۔ لیکن متعصب بھارتی حکمرانوں نے 1948ء میں اس عظیم جامعہ کا ذریعہ تعلیم اردو سے انگریزی کردیا۔ ایک قوم نے سائنسی، علم دوست زندہ زبان کو مردہ بنا دیا اور ایک یہودی قوم نے مردہ ترین عبرانی زبان کو زندہ کرلیا۔

Leave a Comment

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

error: Content is protected !!