مال غنیمت

عسکری جہاد کے ذریعے، جب کسی قوم یا علاقے یا ملک کو فتح کیا جاتا ہے توجو مال اسلامی حکومت قبضہ میں لیتی ہے ، وہ اسلامی حکومت کی صوابدید پہ ہوتا ہے۔ جہاد کے نتیجے میں جو مال / مویشی اسلامی فوج کے  قبضہ میں آتا ہے ، وہ مال غنیمت کہلاتا ہے۔ جو لوگ جنگ میں باقاعدہ حصہ لیتے ہوئے گرفتار ہوجائیں، وہ جنگی قیدی ہوتے ہیں اور ان کے متعلق بھی احکامات ہیں۔

اگر فوج تنخواہ دار نہ ہو تو پانچواں حصہ بیت المال میں اور باقی فوج میں تقسیم کردیا جائے گا۔ اگر فوج تنخواہ دار ہو تو مال غنیمت حکومت کی ملکیت ہوتا ہے اور بیت المال میں جمع ہوگا۔ اسلامی حکومت کی صوابدید پہ ہے کہ وہ مہم میں حصہ لینے والوں کو حوصلہ افزائی کیلئے انعامات سے نوازے۔

Leave a Comment

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

error: Content is protected !!