جمہوریت، مفتی نظام الدین شامزئی رحمۃ اللہ کی نظر میں

مجھے جو بات آپ سے عرض کرنی ہے وہ یہ کہ اب بھی اگر دنیا میں اللہ تبارک وتعالیٰ کا دین غالب ہوگا تو وہ ووٹ کے ذریعے سے نہیں ہوسکتا کہ آپ سیاسی جماعت بنا کر مغربی جمہوریت کے ذریعے سے آپ اللہ کے دین کو بڑھانا چاہیں۔ اللہ کے دین کو غالب کرنا چاہیں تو کبھی بھی دنیا میں اللہ تبارک و تعالیٰ کا دین ووٹ کے ذریعے سے۔مغربی جمہوریت کے ذریعے سے غالب نہیں ہوگا۔اس لیےکہ اس دنیا کے اندر اللہ کے دشمنوں کی اکژیت ہے۔ فساق اور فجار کی اکثریت ہے اور جمہوریت جو ہے وہ بندوں کو گننے کا نام ہے، بندوں کو تولنے کا نام نہیں ہے۔ اقبال نے کہا تھا کہ

جمہوریت ایک طرز حکومت ہے کہ جس میں
بندوں کو گنا کرتے ہیں تولا نہیں کرتے

 وہاں بندوں کو گنا کرتے ہیں کہ کتنے سر ہیں۔ لہٰذا مغربی جمہوریت کے ذریعے کبھی اسلام نہیں آسکتا ہے۔ جیسا کہ پیشاب کے ذریعے کبھی وضونہیں ہو سکتا اور جیسا کہ نجاست کے ذریعے سے کبھی طہارت اور پاکی حاصل نہیں کی جاسکتی۔ اسی طرح سے لادینی اورمغربی جمہوریت کے ذریعے سے کبھی اسلام غالب نہیں آسکتا۔ دنیا میں جب بھی اسلام غالب ہوگا تو اس کاواحد راستہ وہی ہے۔ جوراستہ اللہ کے نبی حضرت محمد صلی اللہ عليہ وسلم نے اختیار کیا تھا اور وہ جہادکارستہ ہے کہ جس کے ذریعےسے اس دنیا میں اللہ تبارک و تعالیٰ کا دین غالب ہوگا۔ ماہنامہ سنابل، کراچی، مئی 2013، جلد 8، شمارہ 11، ص 33

48 سال علماء نے انتخابی اور جمہوری سیاست میں ضائع کئے ، میں دعوی سے کہتا ہوں کہ اس طرزحکومت سے48 ہزار سال کے بعد بہی اسلام نہیں آئے گا) خطباتِ شامزئی ، ص ۲۰۳ (

Leave a Comment

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

error: Content is protected !!